Facing Mecca, deep in prayer, traditional carpet
Facing Mecca, deep in prayer, traditional carpet
Facing Mecca, deep in prayer, traditional carpet
Facing Mecca, deep in prayer, traditional carpet

فلسطین کے دریائے اردن کے مغربی کنارے کے شمالی شہر نابلس میں پولیس نے ایک مشتبہ فلسطینی کو حراست میں لیا ہے جس پر الزام ہے کہ اس نے لمبی نماز پڑھانے پر امام مسجد کو پٹرول چھڑک کر آگ لگانے کی کوشش کی تھی۔ یہ عجیب وغریب واقعہ نابلس شہر کی ایک مسجد میں حال ہی میں پیش آیا تاہم اس مسجد اور امام مسجد کی شناخت نہیں کی گئی۔فلسطینی خبر رساں ادارے ’معا‘ نے ایک سیکیورٹی عہدیدار کے حوالے سے بتایا ہے کہ پولیس نے 50 سالہ ایک شخص کو حراست میں لیا ہے۔ اس نے نماز فجر کے وقت امام مسجد پر پٹرول چھڑک کر اسے آگ لگانے کی کوشش کی تھی۔ذرائع کے مطابق ملزم امام مسجد کو آگ میں جلانے کی کوشش میں کامیاب رہا تاہم وہاں پر موجود نمازیوں نے آگ بجھانے میں مدد کی جس کے نتیجے میں امام مسجد کو معمولی زخم آئے ہیں۔ آگ لگانے سے مسجد کو بھی معمولی نقصان پہنچا ہے۔فلسطینی پولیس کا کہنا ہے کہ ملزم نے پولیس کو تفتیش کے دوران بتایا کہ اس نے امام مسجد کو کئی بار خبردار کیا تھا کہ وہ نماز اور دعا کو بہت لمبا نہ کیا کریں مگر انہوں نے کوئی توجہ نہیں کی۔ امام مسجد کی طرف سے نماز اور دعا کو طول دینے پر اسے مشتعل کیا۔ملزم ایک گھر میں سیکیورٹی گارڈ کے طور پر کام کرتا ہے۔ اس کے خلاف مسجد پرحملہ، مقدس مقام کو آگ لگانے اور لوگوں کو ایذا دینے کے الزامات کے تحت مقدمہ تیار کیا جا رہا ہے۔