افغانستان آپریشن، 2 طالبان رہنماؤں سمیت 65 جنگجو ہلاک

4

کابل: افغانستان میں طالبان کی گاڑی سڑک کے کنارے نصب بم سے ٹکرانے اور ملک کے مختلف علاقوں میں سیکیورٹی فورسز کے انسداد دہشتگردی آپریشنز میں 2 اہم طالبان رہنماؤں سمیت 65 شدت پسند ہلاک اور 55 زخمی ہوگئے۔ افغان میڈیا کے مطابق وزارت دفاع کی طرف سے جاری بیان میں کہا گیا کہ ملک کے مختلف حصوں میں کلیرنس آپریشن کے دوران 27 شدت پسند ہلاک اور 20 زخمی ہو گئے۔ آپریشن ننگر ہار، کپیسا، پکتیا، خوست، لوگر، ارزگان، غور، قندوز، فریاب، سمگان، بغلان، سرائے پل، بدخشان اور ہلمند میں کیا گیا۔ صوبہ قندھار کے ضلع میوند میں سیکیورٹی فورسز کے ہاتھوں 10 شدت پسند ہلاک اور 7 دیگر زخمی ہوگئے۔ بڑی مقدار میں اسلحہ اور گولہ بارود بھی برآمد کیا گیا۔ وزارت دفاع کے مطابق طالبان کی گاڑی سڑک کے کنارے نصب بم سے ٹکرانے کا واقعہ ضلع میدوند میں پیش آیا۔ گاڑی مکمل طور پر تباہ ہوگئی۔ بیان میں کہا گیا کہ ضلع نش کے آپریشن میں 10 شدت پسند ہلاک اور 6 زخمی ہو گئے جبکہ 2 کو گرفتار کر لیا گیا۔ ادھر صوبہ سمگان میں فورسز کے ٹارگٹڈ آپریشن میں 2 اہم طالبان رہنما مارے گئے۔ آپریشن کے دوران ہلاک ہونے والے 6 شدت پسندوں میں گروپ کے فرضی صوبائی گورنر مولوی جلال اور گروپ کے ضلعی چیف مولوی غیاث الدین بھی شامل ہیں۔ آپریشن کے دوران 15شدت پسند زخمی بھی ہوئے ہیں۔ علاوہ ازیں وزارت تعلیم کے ترجمان محمد کبیر حقمال کا کہنا ہے کہ زہریلی گیس کا واقعہ کابل شہر میں اسکول کے ایک پروگرام کے دوران پیش آیا۔

72total visits,1visits today