4 106

جدید ٹیکنالوجی کی مدد سے رعشے کے مریضوں کیلئے لیزر جوتے تیار

سائنس دانوں نے رعشے کے مرض میں مبتلا افراد کے لیے ایسے لیزر جوتے تیار کیے ہیں جو اس مرض پر قابو پانے میں مددگار ثابت ہوسکتے ہیں۔

سائنسدانوں نے جوتے میں لیزر بیم کو استعمال کرتے ہوئے رعشے ( پارکنسن)کی بیماری دور کرنے کی کوشش کی ہے تاکہ اس مرض پر قابو پا سکیں۔

محققین کے مطابق رعشے کی بیماری میں دھڑ اور ہاتھ کانپتے رہتے ہیں جب کہ پیر زمین پر جمے رہتے ہیں لیکن مسلسل جسم کے کانپنے کی وجہ سے مریض ہواس باختہ ہوجاتا ہے جس کی وجہ سے وہ گر جاتا ہے۔

ماہرین کا کہناہے کہ اس جدید لیزر جوتے کی مدد سے مریض اپنے ہوش و ہواس سنبھال سکے گا، یہ جوتا مریض کو درست جگہ حرکت کرنے میں مدد دے گا۔

ماہرین کےمطابق جب بھی رعشے کے مریض چلتے وقت غیر معمولی کیفیت محسوس کریں گے تو جوتے میں لگی لیزر لائٹ ان کی دماغی صلاحیت کو برقرار رکھنے کی کوشش کرے گی اور انہیں درست راہ کی طرف اشارہ فراہم کردے گی جسے یہ دیکھتے ہوئے متوازن حرکت کرسکتے ہیں۔

جوتے میں نصب لیزر لائٹ کو سیڑھیوں اور دیگر جگہ بھی لگایا جاسکتا ہے۔

اس حوالے سے تحقیق کرنے والی خاتون سائنسدان موریلی فرائے کا کہنا ہے کہ 19 مریضوں نے اس جوتے کو استعمال کرکے دیکھا جس کے نتیجے میں وہ سب مطمئن نظر آئے۔

کیٹاگری میں : صحت

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں