kashmir 86

کشمیر:سوپور میں بند دکان کے باہر دھماکہ، 4پولیس اہلکار ہلاک

انڈیا کے زیرِ انتظام کشمیر کے علاقے سوپور میں ہفتے کو ایک بم دھماکے میں چار پولیس اہلکار ہلاک ہو گئے ہیں۔سری نگر کے پولیس حکام کے حوالے سے فرانسیسی خبر رساں ادارے اے ایف پی نے کہا ہے کہ سری نگر سے 50کلو میٹر دور سوپور میں گشت کے دوران ایک دھماکے میں چار پولیس اہلکار ہلاک ہو گئے۔انڈیا کے سرکاری ذرائع ابلاغ کے مطابق شدت پسندوں نے ہڑتال کے دوران ایک دکان کے قریب بم نصب کیا ہوا تھا۔گذشتہ ہفتے انڈین فوج کے چار اہلکار سری نگر کے قریب ایک فوجی اڈے پر شدت پسندوں کے حملے میں ہلاک ہو گئے تھے۔اے ایف پی کے مطابق گذشتہ سال 206 مشتبہ شدت پسند، 57 عام شہری اور 78 انڈین سکیورٹی فورسز کے اہلکار مارے گئے تھے۔انڈیا الزام عائد کرتا ہے کہ پاکستان لائن آف کنٹرول عبور کروا کے شدت پسند انڈیا کے زیر انتظام کشمیر میں داخل کرواتا ہے۔تاہم پاکستان اس الزام کی تردید کرتا ہے اور کہتا ہے کہ وہ کشمیری جدو جہد میں صرف سفارتی اور اخلاقی مدد دیتا ہے۔واضح رہے کہ دسمبر میں شدت پسند تنظیم دولت اسلامیہ کے آن لائن اکاؤنٹ نے ایک ویڈیو شیئر کی تھی جس میں ’کشمیری مجاہدین‘ کی جانب سے ان کے ساتھ وفاداری کا اعلان کیا گیا تھا۔تقریباً 14 منٹ کی اس ویڈیو کو 25 دسمبر کو دولت اسلامیہ کے ناشر نیوز نیٹ ورک چینل پر ٹیلی گرام میسجنگ ایپ کے ذریعے ’ولایت کشمیر‘ ہیش ٹیگ کے ساتھ شیئر کیا گیا ہے۔اس میں ایک نقاب پوش نظر شخص نظر آ رہا ہے جس کی شناخت ابو البرا الکشمیری کے طور پر کی گئی ہے۔ وہ اردو زبان میں دولت اسلامیہ کے رہنما ابوبکر البغدادی کے ساتھ وفاداری کا اعلان کر رہے ہیں۔ اس بیان کے ساتھ انگریزی زبان میں سب ٹائٹل ہیں۔ وہ اس خطے کے دوسرے شدت پسند گروہوں کو اس کی ترغیب بھی دیتے ہیں۔الکشمیری نے حال ہی میں ذاکر موسیٰ کی قیادت میں کشمیر میں قائم ہونے والے القاعدہ سے منسلک جہادی گروپ ’انصار غزوۃ الہند‘ کا نام لیتے ہوئے اسے بیعت کی دعوت دی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں