kil 155

مدارس کی اسنادکا قضیہ حل ،پنجاب حکومت نے علماء کو یقین دھانی کرادی

اسلام آباد؛پنجاب حکومت کی جانب سے دینی مدارس کے فضلاء کی اسناد کا قضیہ حل کرنے کے حوالے سے رضامندی خوش آئند ہے،وفاق المدارس اور اتحاد تنظیمات مدارس کے اصولی موقف کو تسلیم کرتے ہوئے ایجوکیٹرز بھرتیوں میں دینی مدارس کے طلباء کی حق تلفی کا سلسلہ روکنے پر پنجاب حکومت کے فیصلے کا خیر مقدم کرتے ہیں،ایجوکیٹرز بھرتی کے معاملے میں حتمی رائے نوٹیفیکیشن دیکھ کر ہی قائم کی جا سکتی ہے تاہم سیکرٹری تعلیم کی یقین دہانی کو درست سمت کی طرف پیش رفت قرار دیا جا سکتا ہے،مسئلہ کے لیے کردار ادا کرنے والوں اورمدارس کے فضلاء کی آواز میں آواز ملانے والوں کے شکر گزار ہیں ان خیالات کا اظہار ترجمان اتحاد تنظیمات مدارس اور جنرل سیکرٹری وفاق المدارس العربیہ پاکستان مولانا محمد حنیف جالندھری نے اپنے ایک اخباری بیان میں کیا-انہوں نے بتایا کہ پنجاب میں ایجوکیٹرز بھرتی کے دوران دینی مدارس کے فضلاء کی درخواستیں اور اسناد مسترد کیے جانے پر ملک بھر میں تشویش واضطراب کی لہر دوڑ گئی تھی اس حوالے سے وفاق المدارس العربیہ پاکستان اور اتحاد تنظیمات مدارس کے قائدین نے کردار ادا کیا،صدائے احتجاج بلند کی،مختلف ذرائع سے مدارس کے طلباء کی حق تلفی کا سلسلہ روکنے کی کوشش کی خاص طور پر وفاق المدارس العربیہ پاکستان کی مجلس عاملہ کے رکن مولانا حافظ فضل الرحیم مہتمم جامعہ اشرفیہ لاہور نے ہماری درخواست پر مختلف مکاتب فکر کے علماء کرام کے ہمراہ سیکرٹری تعلیم حکومت پنجاب سے ملاقات کی اور انہیں وفاق المدارس اور فضلاء کے موقف سے آگاہ کیا جس پر سیکرٹری تعلیم نے دینی مدارس کے فضلاء کی درخواستیں اور اسناد قبول کرنے کا نوٹیفکیشن جاری کرنے کا کہا-مولانا محمد حنیف جالندھری نے کہا کہ سیکرٹری تعلیم کی جانب سے نوٹیفکیشن کا اجراء درست سمت کی طرف پیش رفت اورخوش آئند اقدام ہے تاہم حتمی اطمینان کا اظہار پالیسی کی تبدیلی کے نوٹیفکیشن کو دیکھ کر ہی کیا جا سکتا ہے-مولانا جالندھری نے اس قضیے کے حل کے لیے کردار ادا کرنے والوں اوردینی مدارس کے فضلاء کے حق میں آواز بلند کرنے والوں کا بطور خاص شکریہ ادا کیا-

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں