1 52

مجسم غم الجزئری خاتون کی تصویر سے ہر آنکھ اشک بار

افریقی ملک الجزائر میں گذشتہ ہفتے ملک کی تاریخ کا ایک المناک واقعہ اس وقت رنما ہوا جب ایک فوجی طیارہ حادثے کا شکار ہوا اور اس حادثے میں اڑھائی سو قیمتی جانیں ضائع ہوگئیں۔ حکومت نے طیارہ حادثے کے بعد کئی روزہ سوگ کا اعلان کیا تھا۔

الجزائر میں سوگ ختم اور طیارے میں مرنے والے تمام افراد کی تدفین کردی گئی ہے، مگر سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والی ایک تصویر نے الجزائری عوام کے غم اور صدمے کو ایک بار پھر تازہ کردیا۔

تصویر میں ایک خاتون کو اپنے جواں سال بیٹے کی قبر سے لپٹ کر روتے دیکھا جا سکتا ہے۔ الجزائری ماں کی کیفیت دیکھ کر ہر آنکھ اشک بار ہو گئی۔ طیارہ حادثے میں مرنے والے افراد کی تدفین کے بعد لوگ اپنے گھروں کو جا چکے ہیں یہ ماں اپنے بیٹے کی قبر کے ساتھ لپٹی ہوئی ہے۔

ایک مقامی تجزیہ نگار منصور السعیدی نے اس تصویر پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ یہ ایک ماں کے حقیقی دکھ کی زندہ علامت ہے۔ ہم اسے الفاظ میں بیان نہیں کرسکتے۔ خالد الشقاقی نے لکھا کہ اس خاتون سے اس کا لخت جگر چھن گیا اور اس کی گود خالی ہوچکی گویا اس کی اپنی زندگی کا اختتام ہوگیا۔ ہم اس کے لیے صرف صبر کی خواہش کرسکتے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں