1 80

دنیا میں 90 فی صد لوگ آلودہ ہوا میں سانس لینے پر مجبور!

عالمی ادارہ صحت نے دنیا بھر میں بڑھتی فضائی آلودگی کے حوالے سے لرزہ خیز اعداد و شمار جاری کیے ہیں۔

رپورٹ کے مطابق دنیا میں 90 فی صد آبادی آلودہ ہوا میں سانس لینے پر مجبور ہے جب کہ صرف دس فی صد کو آلودگی سے پاک ماحول میسر ہے۔ رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ فضائی آلودگی سالانہ اوسطا 70 لاکھ افراد کی اموات کا موجب بن رہی ہے۔

رپورٹ میں فضائی آلودگی کی کمی بیشی کے اعتبار سے بھی علاقوں کی نشاندہی کی گئی ہے۔ یورپی ممالک اور امریکا کو فضائی آلودگی کے اعتبار سے کم خطرناک قرار دیا گیا ہے جہاں حالیہ برسوں کے دوران فضائی آلودگی میں قدرے کمی آئی ہے۔

عالمی ادارہ صحت کا کہنا ہے کہ دنیا کے 10 میں سے 9 افراد فضائی آلودگی سے متاثر ہیں یا وہ انتہائی آلودہ ہوا میں سانس لے رہے ہیں۔ یہ وہ اعدادو شمار جو دو سال قبل بھی جاری کیے گئے تھے۔ دو سال کے دوران میں کوئی تبدیلی نہیں آئی۔

عالمی ادارہ صحت کے ڈئریکٹر جنرل ڈاکٹر ٹیڈرس اڈھانم گیبریسوس کا کہنا ہے کہ فضائی آلودگی امیر اور غریب ہرایک کے لیے یکساں خطرناک ہے۔ان کا کہنا تھا کہ ہم تین ارب لوگوں کے فضائی آلودگی کے شکار ہونے کو کیسے برداشت کرسکتے ہیں جب کہ ان میں زیادہ تر بچے اور خواتین ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ قاتل دھواں، گھروں میں آلودہ ایندھن اور گھروں میں ککنک چولہے اور ان سے نکلنے والی مضر صحت گیسیں صحت کے لیے تباہ کن ہیں۔ عالمی ادارہ صحت نے یہ اعدود شمار 108 ملکوں کے 4300 شہروں سے جمع کیے ہیں

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں