nofal-rabani 3

٭ ڈاکٹر سمیع اللہ فراز کی مسلکی ڈفلی ٭

تحریر:نوفل ربانی

———————–
ڈاکٹر صاحب کی بات کو سمجھنے سے قبل بطور تعارف یہ جانناا ضروری ہے کہ جناب شاگرد رشید ہیں جناب عمارخان ناصر صاحب کے اور گاہے بگاہے عماری وائرس اور دانش ماری کا شوق چڑھتا ہے ۔شوق شاہاں سلامت رہے ۔
موصوف میرے بہت اچھے دوست ہیں لیکن وہ میڈیائی پروپگنڈے سےے شدید متاثر اور جذباتی ہوگئے ہیں اپنےایک فیس بکی اسٹیٹس میں موجودہ دہشت گردی کی لہر کو انکے ماقبل اورمابعد متعلقات کے ساتھ ” دیوبند ” مسلک کے ساتھ بالجزم نتھی ہی نہیں کیا بلکہ انکو ہی ذمہ دار ٹھرانے کی مجرمانہ اور غیر دیانتدارانہ سعی نامشکور فرمائی ہے ۔
بریلوی مکتب فکر کو مبارک ہو کہ آپکے حق میں ڈاکٹر صاحب کی براتت آگئی لیکن ساتھ ہی ساتھ آپکی گمراہی کا گرانقدر فتوی بھی صادر ہوگیا ۔ اناللہ وانا الیہ راجعون
اور جماعت اسلامی کا ذکر خیر تو کوکا کولا سمجھ کر یوں کہتے ہوئےے گول کرگئے جیسے کہ ” ظالما کوکا کولا پلادے ”
اہل حدیث مسلک کو بھی کلین چٹ دے گئےزہے نصیب لیکن تمام ترر مسلکی تعصب کو بروئے کار لاکر عماری لب ولہجہ میں دیوبند کو قصوروار ٹھرا دیا
محترم المقام جناب ڈاکٹر صاحب !!!
ہاں افغانستان پرجارحیت کے وقت دیوبندی مسلک نے بھر پور افغانن مسلمانوں کے ساتھ ملکر سالمیت افغان وپاکستان کی جنگ شرعی بنیادوں پر لڑی مفتی محمود صاحب کا فتوی اسکا نکتہ آغاز تھا
پوچھنا یہ تھا دل پر ہاتھ رکھ کر بتائیں اگر مفتی محمود رحمہ اللہ کاا فتوی نہ ہوتا تو کیا ایک بھی پاکستانی نوجوان جاتا نہیں اور مفتی صاحب بغیر تمام تر شرعی تقاضوں کو مد نظر رکھے بغیر فتوی دے سکتے تھے ؟؟؟
اسی ضمن میں یہ عقدہ بھی حل فرمائیں کیا افغان جہاد میں شرکتت ریاست پاکستان اور عالمی رضامندی شامل نہیں تھی ؟؟؟؟ رضامندی تو دور کی بات ریاست پاکستان ان نوجوانوں کے نام پر پورے مغرب سے مال نہیں لیتی رہی
لہو نوجوان کا لیکن ڈالر آپکے جرنیل مہان کا
اسکے بعد کشمیر کا ٹھیکہ تو آپ نے اہل حدیث مکتب کو دے دیا لیکنن البدر حزب المجاہدین کے نام تو شائد آپ نے نہ سنے ہوں خیر سانوں کی ؟؟؟
ڈاکٹر صاحب کتنا بڑا ظلم تولہ آپ نے کہ 40 ہزار انسانوں کا قتل دیوبندد مسلک پر بغیر کسی ثبوت کے ڈال دیا ؟؟؟ بلیک واٹر، سی آئی اے، موساد، خاد، را ، مجلس وحدت المسلیمین اور انصار الحسین تو یہاں کانچا کھیلنے آتے ہیں
کیا آپکی نظر سے جامعہ اشرفیہ میں اکابر دیوبند کا وہ متفقہ فتویی نہیں گزرا
جناب تمام اکابر نے بلکل آغاز ہی میں اس ساری صورت حال سے براتت ظاہر کی اور اس فتوے کی پاداش میں اپنے کتنے ہی اکابر گنوائے مولانا حسن جان مولانا نورمحمد جیسے کئی اہل علم اسی فتوے کی پاداش میں بے دردی سے شہید کیئے گئے
آپکوو پشاور میں مولانا فضل الرحمان صاحب کا 1500 یا 2500 علماءء کرام سے دہشت گردی کے خلاف فتوی لیا وہ آپ کیوں شیر مادرسمجھ کر پی گئے
جناب اے پی ایس پر مفتی اعظم پاکستان مفتی رفیع عثمانی دامتت برکاتہم کا ویڈیو کلپ جس میں وہ ” طالبان ” کو ظالمان قرار دے کر اسلام سے لاتعلق قرار دیتے ہیں جی وہی مفتی اعظم جو شیعہ پر بھی مطلقا کفر کا فتوی دینے میں متامل ہیں
حضور کوئی ایک مستند عالم دین کوئی ایک کراچی سے خیبر تکک بتائیں دیوبندی جس نے اس ظلم وبربریت کی تائید کی ہو یا خاموش رہا ہو جس واقعہ پر آپ کی عماریت میں ابال آیا ہے وہ ابھی شائد چینلوں تک بھی نہیں پہنچا تھا کہ وفاق المدارس کی مذمت آگئی تھی اس وقت شائد آپ کسی مہ وش سے چیٹنگ میں مصروف ہوں
اس وقت پاکستان میں مسلک دیوبند کی علمی وراثت وفاق المدارسس کے پاس ہے کتنی انکی پریس ریلیز اور پریس کانفرنسیں ریکارڈ پر ہیں ان خوارج سے لاتعلقی پر اس ظلم سے کلی برات ظاہر کرنے پر مفتی تقی عثمانی صاحب نے پرویز مشرف کو اسکے سامنے چیلنج کیا تھا کہ ایک مدرسے کا نام بتادیں جو یہ ذہنیت رکھتا ہویا کسی بھی درجے میں ملوث ہو تو ہم اسے بند کرکے آپکو پکڑاتے ہیں پرویز نے تمام اینٹلی جنس والوں کو دیکھ کر کہا بتاو بھئی
تو سب بغلیں جھانکنے لگے لیکن جناب کی عماری اینٹلیجنس تو کمالل کرگئی
سب کہہ دو سبحان اللہ
” الشریعہ ” کے علاوہ بھی دیگر رسائل وجرائد کو ایک نظر دیکھ لیاا کریں
افسوس ہوتا ہے جب ایک پڑھا لکھا آدمی بھی میڈیاء کے دجل اورر شیطنت کی رو میں بہہ جاتا ہے
حضؤر
لوگوں کو کنفیوذنہ کریں اصلی طاقتوں کا نام لیں انکے نام لینے سےے دانتوں کو پسینہ آتا ہے تو ازراہ کرم دانشوری دکھانی کوئی فرض بھی نہیں
ویسے دھماکے کرنے والے جانور پاکستانی بھی ہیں اور کلمہ گو توو آپکی منطق کے مطابق تو پھر پاتانی اور کلمہ بھی ذمہ دار ہوئے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں